انٹر یونیورسٹی ڈرامہ مقابلہ جات میں نیشنل ٹیکسٹائل یونیورسٹی کی جانب سے ڈرامہ ’’دی لاسٹ سَپر ‘‘ پیش

فیصل آباد (سلیم شاہ ،چیف انوسٹی گیشن سیل)آرٹس کونسل، لائلپور ڈویلپمنٹ آرگنائزیشن اور اپوا کے زیر اہتمام انٹر یونیورسٹی ڈرامہ مقابلہ جات میں نیشنل ٹیکسٹائل یونیورسٹی کی جانب سے ڈرامہ ’’دی لاسٹ سَپر ‘‘ پیش کیا گیا۔جس میں اسٹوڈنٹس فنکاروں نے نہ صرف اپنے فن کے جوہر دیکھائے بلکہ حاضرین سے پر جوش داد بھی حاصل کی۔اس موقع پر مہمان گرامی میں ڈی سی او نورالامین مینگل ، ایم پی ایز ثریا نسیم اور شیخ اعجاز احمدتھے۔شیخ اعجا احمد نے خطاب کرتے ہوئے کہاکہ آرٹس کونس،لائلپور ڈویلپمنٹ آرگنائزیشن اور اپوا کے اشتراک سے منعقد ڈرامہ مقابلہ جات میں نیشنل ٹیکسٹائل یونیورسٹی کے اسٹوڈنٹس نے جس فنکارانہ انداز سے ڈرامہ پیش کیا لگ رہا تھا جیسے یہ فنکار پرفیشنل طریقہ سے ڈرامہ پیش کر رہے ہوں۔انہوں نے کہا صائمہ نے جو اداکاری کی ہے وہ قابل تحسین ہے ۔نوجوان ڈی سی او نورالامین کے متعلق انہوں نے کہا کہ گنگا رام یہاں سے گئے اور جاتے ہوئے گنگا رام ہسپتال دے گئے اور بہت سے لیڈر آئے اور بے شمار چیزیں دے گئے اس طرح آپ نے پہلے ضلع کونسل دیکھا اور اب دیکھا آپ نے اس میں لائلپور کے حوالے سے تبدیلی محسوس کی ہو گی۔یہ تبدلی سوہنا لائلپور سے آئی۔جس کا سہرا ڈی سی او کے سر جاتاہے۔ڈی سی او نورالامین مینگل نے اسٹوڈنٹس کی پرفارمس کو ان کی تربیت کرنے والوں سے منسوب کرتے ہوئے ان کو خراج تحسین پیش کیا اور کہا کہ نیشنل ٹیکسٹائل یونیورسٹی کے طلبہ وطالبات نے بہترین پرفارمس پیش کی ہے۔میں صوبائی اسمبلی کے ممبران کی موجودگی میں سٹی ڈسٹرکٹ گورنمنٹ کی طرف سے اس ڈرامہ کے مقانبلہ جات میں جیتنے والی ٹیم کیلئے ایک لاکھ روپے کا اعلان کرتا ہوں جس پر ہال میں موجود اسٹوڈنٹس کی بڑی تعداد نے تالیاں بجا کر ڈی سی او نورالامین کو خراج تحسین پیش کیا۔انہوں نے ریذیڈنٹ ڈائریکٹر طارق جاوید کو لائلپور سے متعلق ڈرامہ کے مقابلہ جات کروانے پر شاباش دی اور کہا کہ 23مارچ پر ’’ آزادی‘‘ کے ٹائٹل پر مبنی ڈرامے بھی کروائے جائیں تاکہ عام شہریوں کو بھی لائلپور سے منسوب آزادی کی حقیقت واضع ہوسکے۔آخر میں اسٹوڈنٹس فنکاروں میں اسناد تقسیم کی گئیں

0 comments

Write Down Your Responses