میرپورخاص شہر جرائم پیشہ افراد کے حوالے

میرپورخاص(بیورورپورٹ) میرپورخاص شہر جرائم پیشہ افراد کے حوالے کردیا گیا۔اغواء،چوری، ڈکیتی اور دیگر جرائم روز کا معمول بن گئے ہیں۔ پولیس افسران تماشائی بنے ہوئے ہیں۔یہ بات حق پرست رکن سندھ اسمبلی ڈاکٹر ظفر کمالی نے ایک بیان میں بڑھتی ہوئی جرائم کی وارداتوں پر تشویش کا اظہار کرتے ہوئے کہی۔انہوں نے کہا کہ عوامی حلقوں اور تاجر برادری نے ضلعی اور پولیس انتظامیہ سے ملاقات کے دوران جرائم کی وارداتوں میں تشویشناک حد تک اضافے کی جانب بارہا توجہ دلائی لیکن تمام کوششیں لاحاصل ثابت ہوئیں۔گزشتہ رات حمیدپورہ کالونی سے نامعلوم چور ایک ٹویوٹاکرولا کاراور ایک کورے کار چوری کر کے لے گئے ا ور ایک مہینے میں چار گاڑیاں چوری ہوچکی ہیں ۔ مقامی پولیس افسران بلند وبانگ دعوے کرتے نظر آتے ہیں لیکن شہرمیں اغواء، چوری،ڈکیتی،رہزنی اور بھتہ خوری سمیت دیگر جرائم کی وارداتوں میں اچانک اضافے نے تمام دعوؤں کی قلعی کھول دی ہے۔پولیس افسران کی ناک کے نیچے جرم پل رہا ہے لیکن ساون کے اندھوں کے مصداق انہیں سب ہرا ہی سوجھتا ہے۔بصیرت اور بصارت سے محروم پولیس افسران سب اچھا ہے کا راگ الاپ رہے ہیں اور جرائم پیشہ افراد کھلے عام شہر بھر میں دندناتے پھر رہے ہیں۔انہوں نے مزید کہا کہ محکمہ پولیس میں موجود کالی بھیڑوں کی سرپرستی کی وجہ سے جرائم پیشہ عناصر دن دیہاڑے عوام کو لوٹ رہے ہیں۔اس سنگین صورتحال کے باعث عوام میں شدید بے چینی اور اشتعال پھیل رہا ہے۔پولیس کی جانب سے جرائم پیشہ افراد کی گرفتاری میں پس و پیش سے کام لینا معنی خیز ہے۔سوچے سمجھے منصوبے کے تحت شہر کے حالات خراب کئے جا رہے ہیں۔انہوں نے حکومت سندھ اور آئی جی سندھ پولیس سے مطالبہ کیا کہ میرپورخاص میں جرائم کی بڑھتی ہوئی وارداتوں کا فوری نوٹس لتے ہوئے مقامی پولیس افسران کو جرائم پیشہ افراد کی سرکوبی کا پابند بنایا جائے اور عوام کو بلا خوف و خطر جینے کا حق دلایا جائے

0 comments

Write Down Your Responses