پولیس جرائم پیشہ عناصر کی سرپرستی میں ملوث

میرپورخاص(ایم وی این نیوز بیورورپورٹ) پولیس جرائم پیشہ عناصر کی سرپرستی میں ملوث ہے۔ڈکیتی،اغواء ،قتل سمیت دیگر جرائم معمول بن گئے۔جرائم کی بیخ کنی کے لئے موثر اقدامات کئے جائیں۔یہ بات حق پرست رکن سندھ اسمبلی ڈاکٹر ظفر کمالی نے اپنے ایک بیان میں کہی۔انہوں نے کہا کہ سنگین وارداتوں میں ملوث ملزمان سے سازباز کرکے بھاری رشوت کے عوض کھلی چھوٹ دے دی گئی ہے۔ محکمہ پولیس کے افسران کی ملی بھگت کے باعث میرپورخاص شہر جرائم پیشہ افراد کی آماجگاہ بن گیا ہے ۔ قانون کے رکھوالے قانون شکن بن گئے ہیں۔انہوں نے مزید کہا کہ پولیس افسران کی سرپرستی میں گلیوں اور محلوں میں جوئے،سٹے اور منشیات کے اڈے کھل گئے ہیں۔منشیات کے استعمال سے کئی گھروں کے چراغ گل ہوچکے ہیں ۔ پولیس اہلکار کھلے عام مذکورہ اڈوں سے ہفتہ اور ماہانہ وصولی کرکے اعلیٰ افسران تک پہنچانے کی خدمات انجام دیتے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ رشوت ستانی اور بھتہ خوری میں ملوث پولیس اہلکاروں کی تعیناتی اور پولیس افسران کی سرپرستی کے باعث شہر بھر میں چوری ، ڈکیتی، اغواء، رہزنی اور قتل سمیت دیگر جرائم کی وارداتوں میں تشویشناک حد تک اضافہ ہوگیا ہے جس کی وجہ سے شہری عدم تحفظ کا شکار ہیں۔میرپورخاص میں قانون نافذ کرنے والے اداروں کی رٹ ختم ہوچکی ہے۔جرائم پیشہ عناصر شہر بھر میں دندناتے پھر رہے ہیں ۔ انہوں نے چیف جسٹس سپریم کورٹ ، چیف آف آرمی اسٹاف ، حکومت سندھ اور آئی جی سندھ پولیس سے مطالبہ کیا کہ جرائم پیشہ عناصر کی سرپرستی کے مرتکب نااہل پولیس افسران کے خلاف فوری طور پر سخت ترین محکمانہ کاروائی عمل میں لائی جائے اور میرپورخاص کے عوام کو بلا خوف وخطر جین

0 comments

Write Down Your Responses