فوج پر حملہ کرنے والوں کے خلاف جوابی کارروائی کے فیصلے کا خیرمقدم کرتے ہیں، صاحبزادہ محمد حامد رضا

فیصل آباد( سلیم شاہ ،چیف انوسٹی گیشن سیل ) سنی اتحاد کونسل کے چیئرمین صاحبزادہ محمد حامد رضا نے کہا ہے کہ صوفیاء کے ماننے والے اہل حق اسلام اور پاکستان کے لیے جینے مرنے کا عہد کر چکے ہیں۔ فوج پر حملہ کرنے والوں کے خلاف جوابی کارروائی کے فیصلے کا خیرمقدم کرتے ہیں۔ دہشت گردوں کو منہ توڑ جواب دینا ضروری ہو گیا ہے۔ جے یو آئی اور جماعت اسلامی فوجیوں کو مروانا اور دہشت گردوں کو بچانا چاہتی ہیں۔ صوفیاء کو ماننے والے فسادی نہیں میلادی ہیں۔ دہشت گردوں کی حمایت میں بیان دینے والوں کا محاسبہ کیا جائے۔ طالبان کے اساتذہ انہیں ہتھیار پھینکنے پر مجبور کریں۔ غیرمسلح ہونے پر آمادہ طالبان کے لیے عام معافی کا اعلان کیا جائے۔ مذہب کا منفی استعمال خطرناک حد تک بڑھ گیا ہے۔ پاکستان جعلی جہاد کے منفی اثرات کی زد میں ہے۔ حکمران نئے سقوط سے پہلے سکوت توڑیں۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے سنی اتحاد کونسل کے تھنک ٹینک کے دو روزہ اجلاس کے اختتامی سیشن سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔ تھنک ٹینک کے اجلاس میں 2014کے لیے تنظیمی منصوبہ بندی تیار کی گئی اور ملکی حالات کا جائزہ لے کر اہم سفارشات تیار کی گئیں۔ صاحبزادہ محمدحامد رضا نے مزید کہا کہ صوفیاء کے ماننے والے اہل حق اسلام اور پاکستان کے لیے جینے مرنے کا عہد کر چکے ہیں۔ حکومت کی طالبان پالیسی ابہام کا شکار ہے۔ قوم جنازے اٹھا اٹھا کر تھک چکی ہے۔ حکومت قوم کو بے رحم دہشت گردوں سے نجات دلائے۔ امن کی بحالی کی کنجی ریاستی اداروں کے پاس ہے۔ بروقت فیصلہ نہ کر سکنے والے حکمران کو رخصت ہونا پڑتا ہے اور جو ریاست نفاذِ قانون نہ کروا سکے وہ باقی نہیں رہتی۔ شدت پسندوں کے حامیوں پر غداری کے مقدمے چلائے جائیں۔ دہشت گرد امریکہ اور بھارت کے ایجنڈے پر عمل پیرا ہیں۔ پاکستان کو جرأت مند لیڈر کی ضرورت ہے۔ ملک دھماکوں سے گونج رہا ہے اور وزراء ہلے گلے میں مصروف ہیں۔ حقیقی علماء حقیقی اسلام پیش کرنے کے لیے میدان میں آئیں۔ وفاقی وزیر کے استقبال کے لیے وحشیانہ ہوائی فائرنگ کا واقعہ قابل مذمت ہے۔ وفاقی وزیر کی موجودگی میں مسلم لیگی کارکنوں کا قانون کی دھجیاں اڑانا افسوسناک ہے۔ اے پی سی کے بعد تین ہزار پاکستانی شہید ہو چکے ہیں۔ بلوچستان اور قبائلی علاقوں میں ملک دشمن قوتیں سرگرم عمل ہیں۔

0 comments

Write Down Your Responses