گڈانی پاور پراجیکٹ میں سرمایہ کاری حکومت کی اولین ترجیح ہے

اسلام آباد(انویسٹی گیشن ٹیم) وزیراعظم کے معاون خصوصی اور سرمایہ کاری بورڈ کے چیئرمین ڈاکٹر مفتاح اسماعیل نے کہا کہ تھرمیں موجود 175ارب ٹن کوئلے کے ذخائر سے آئندہ 200 سال تک ایک لاکھ میگا واٹ بجلی پیدا کی جا سکتی ہے۔
وائی ای ایم اے گروپ کے جنرل منیجر چین جانگ کی سربراہی میں ملاقات کرنے والے وفد سے گفتگو کرتے ہوئے انھوں نے کہاکہ گڈانی پاور پراجیکٹ میں سرمایہ کاری حکومت کی اولین ترجیح ہے۔ اس موقع پر سیکریٹری سرمایہ کاری بورڈ عمران افضل چیمہ اور پرائیویٹ پاور اینڈ انفرااسٹرکچر بورڈ ، ٹریڈ ڈیولپمنٹ اتھارٹی آف پاکستان کے نمائندوں کے علاوہ دیگر متعلقہ حکام بھی موجود تھے۔
ملاقات کے دوران سیکریٹری بورڈ نے وفد کو بتایا کہ توانائی کا شعبہ حکومت کی اولین ترجیحات میں شامل ہے تا کہ طلب اور رسد میں موجود فرق کو ختم کیا جا سکے۔ انہوں نے وفد کو سرمایہ کاری پالیسی سے بھی آگاہ کیا جبکہ ملاقات کے دوران نیشنل لاجسٹک سیل( این ایل سی) کے ڈائریکٹر نے وفد کو بتایا کہ ہمسایہ ممالک کے ساتھ بارڈرز پر ٹرمینل کی تعمیر کے لیے سرمایہ کاری کے وسیع مواقع موجود ہیں۔ یاد رہے کہ وائی ای ایم اے گروپ عالمی تجارت، بین الاقوامی انجینئرنگ ٹھیکوں، سرمایہ کاری، تعمیرات سمیت مختلف شعبوں میں خدمات سرانجام دے رہا ہے۔

0 comments

Write Down Your Responses