موبائل فون کی خرید وہ فروخت سے لیکر بیلنس کی حد تک بڑے پیمانے پر لوٹ مار کا سلسلہ

میرپورخاص ( ایم وی این نیوز بیورورپورٹ) عوام سے موبائل فون کی خرید وہ فروخت سے لیکر بیلنس کی حد تک بڑے پیمانے پر لوٹ مار کا سلسلہ جاری ہے پاکستان میں کام کرنے والی تمام موبائل فون کمپنیوں نے ایزی لوڈ اور کارڈ لوڈ کی مد میں بچیس فیصد کٹوتی سے بڑے پیمانے پر لوٹ مار کی جارہی ہے۔ جبکہ غیر رجسٹرڈ اور مقامی طور پر تیار ہونے والے ہزاروں قسم کے موبائلوں کی خرید وہ فروخت میں بھی بڑے پیمانے پر فراڈ ہو رہا ہے ۔ عوامی شکایات پر ایوان صحافت میرپورخاص کی ٹیم نے جب میرپورخاص میونسپل کمپلیکس میں قائم موبائل فون کی دکانوں کا دورہ کیا اور اسکے علاوہ عمرکوٹ، ڈگری، جھڈو ، سامارو، کوٹ غلام محمد اور اندرون سندھ کے مختلف شہروں میں موبائل فون فروخت کرنے والے دکانداروں اور موبائل فون رپیئر کرنے والے دکانداروں کی انکوائری کی تو اس ملک کی مظلوم عوام کے ساتھ موبائل فون پر بھی نہیں بخشا جارہا ہے ۔ملک میں اس وقت پانچ موبائل فون کمپنیاں کام کرہی ہیں اور تمام کمپنیوں کے معائدے سرکاری ادارے پاکستان ٹیلیکمیونیکیشن اتھارٹی (پی ٹی اے)سے ہوئے ہیں۔ موبائل فون پر اسکریچ کارڈ اور ایزی لوڈ کے نام پر بڑے پیمانے پر عوام کے ساتھ فراڈ ہورہا ہے۔ سروے کے مطابق دنیا میں اس وقت پاکستان سب سے زیادہ موبائل استعمال کرنے والا ملک بن گیا ہے اور اور سو روپئے والے ایزی لوڈ اور اسکریچ کارڈ سے لوڈ کرنے پر پچیس فیصد ٹیکس موبائل فون کمپنی کے کھاتے میں جاتا ہے 100 روپئے کے لوڈ پر ٹوٹل پئسے 75 روپئے کنزیومر کو ملتے ہیں۔ مہنگے مہنگے اشہتارات دینے والی موبائل فون کنیکشن کمپنیوں اور سرکی کی ملی بھگت سے معصوم اور سادہ عوام سے اب بیلنس لوڈ کروانے سے لیکر بات کرنے تک پیسے کٹ رہے ہیں ۔ واھ واھ کیا بات ہے اس ملک کے حکمرانوں کی اب بات پر بھی ٹیکس نافظ کردیا گیا ہے۔ پڑوسی ملک سمیت دنیا میں کہیں بھی فون کال سے لیکر بیلنس لوڈ پر اتنا ٹیکس نہیں کرتا۔ جبکہ موبائل فون کمپنیوں نے تو ٹون ڈاؤن لوڈ سے لیکر اپنے نمائندے سے بات کرنے تک پئسے چارج کرتی ہیں اور روزانہ اربوں روپئے موبائل فون پر کالز، ایس ایم ایس، ایم ایم ایس اور دیگر سوروس استعمال میں عوام کی جیبوں سے نکالے جارہے ہیں۔ جبکہ اگر ترقی ہوئی ہے تو جہالت کی ، کرپشن کی، دھشتگردی لاقانونیت کی اور موبائل فون کی خرید وہ فروخت کی ۔ چائنہ سے در آمد شدہ موبائل فون سے لیکر ملٹی نیشنل کمپنی کے موبائل فون کی خرید وہ فروخت کی مد میں مقامی دکانداروں نے من پسند ریٹ مقرر کرکے لوٹ مار کا بزا گرم کرکے رکھا ہوا ہے۔ سروے کے مطابق موبائل فون پر غیر اخلاقی وڈیوز کی لوڈنگ سے لیکر مختلف ملکی وہ غیر ملکی گانے بھروانے خراب موبائل فون کی مرمت کی مد میں بھی بڑے پیمانے پر لوٹ مار کی جارہی ہے۔ ایوان صحافت میرپورخاص کی ٹیم سے بات چیت میں باشعور افراد نے پی ٹی اے کی جانب سے موبائل فون کے مختلف کنیکشن میں پچیس فیصد ٹیکس کی کٹوتی یعنی ایک ہزار روپئے کا بیلنس بھجنے پر ڈھائی سو روپئے کا ٹیکس لینے پر شدید برھمی کا اظہار کیا ہے اور موبائل فون کی برآمدگی اور فروخت پر حکومتی اداروں کی جانب سے چیک اینڈ بیلنس نہ ہونے پر حیرانی کا اظہار کرتے ہوئے، ویزیر اعظم، وفاقی وزیر مواصلات، سیکریٹری مواصلات اور اعلیٰ عدالتوں سے اپیل کی ہے کہ موبائل فون کے زریعے بات کرنے پر بھی سو روپئے کے لوڈ پر پچیس فیصد کی کٹوتی کی ٹیکس کی مد میں کم کی جائے اور موبائل فون کے دکانوں پر موبائل فون کی خرید وہ فروخت اور رپئر کے بہانے سے عوام سے لوٹ مار کے سلسلے پر ضلعے لیول کی کمیٹی بنائی جائے تاکہ اس سوشل مد میں کرپشن اور لوٹ مار کی دکانداری کو بند کیا جاسکے۔ 

0 comments

Write Down Your Responses