وفاقی اردویونیورسٹی کے مالی اخراجات میں کئی گنااضافہ

کراچی(انویسٹی گیشن ٹیم) وفاقی اردویونیورسٹی کے مالی اخراجات میں ایک سال میں اچانک کئی گنااضافہ ہوگیا۔
وفاقی اردویونیورسٹی کی انتظامیہ نے مالی اخراجات میں غیرمعمولی اضافے کے بعد آئندہ مالی سال کیلیے مختص ہونے والے بجٹ میں بھی ایک ہزارملین روپے اضافی مختص کردیے ہیں تاہم مالی اخراجات میں ہونے والے غیرمعمولی اضافے کابوجھ ایچ ای سی پرڈالتے ہوئے اعلیٰ تعلیمی کمیشن سے ایک ارب روپے اضافی طلب کرلیے ہیں، اخراجات کواپنے ذرائع سے پوراکرنے کے بجائے ایچ ای سی سے مقررہ مالی گرانٹ سے150فیصد زائد رقم طلب کرلی جس کے سبب اعلیٰ تعلیمی کمیشن کے حکام حیران ہوگئے، اعلیٰ تعلیمی کمیشن کے حکام کاکہناہے کہ ملک کی 2بڑی جامعات پنجاب یونیورسٹی اور جامعہ کراچی کے مالی بجٹ میں اچانک اتنا اضافہ دیکھنے میں نہیں آیاجس قدروفاقی اردویونیورسٹی نے اپنے فاضل اخراجات کے سبب بجٹ میں اضافہ کردیا۔
آئندہ مالی سال کے بجٹ میں 150فیصد سے بھی زائد رقم مختص کیے جانے کا انکشاف 2روزقبل اردویونیورسٹی کی فنانس کمیٹی کے منعقدہ اجلاس میں ہوا اوربجٹ میں اس قدراضافہ دیکھ کراجلاس میں شریک ایچ ای سی کے نمائندے حیران رہ گئے، اضافی بجٹ اور اخراجات میں غیرمعمولی اضافے پرشدید اعتراضات سامنے آئے اوراردویونیورسٹی کا آئندہ مالی سال 2014-15 کابجٹ منظورہوئے بغیرہی فنانس کمیٹی کااجلاس ختم ہوگیا ، ’’ایکسپریس‘‘کومعلوم ہواہے کہ وفاقی اردویونیورسٹی کے ٹریژرارچوہدری محمد علی کی جانب سے فنانس کمیٹی کے اجلاس میں پیش کیے گئے بجٹ میں اخراجات کی مختلف مدوں میں گزشتہ مالی سال ،رواں مالی سال اورآئندہ مالی سال میں اس قدراضافہ دکھایاگیاکہ اجلاس کے شرکا حیران رہ گئے، یونیورسٹی کوایچ ای سی سے رواں مالی سال میں 680.971 ملین روپے کی گرانٹ موصول ہوئی جسے بڑھاکر1616.840ملین یعنی تقریباً68کروڑروپے سے بڑھاکر 1ارب 61کروڑروپے طلب کیے گئے ہیں اوررواں مالی سال کے مجموعی بجٹ 1048.112ملین روپے کوبڑھاکر2000.844ملین روپے کابجٹ پیش کردیاگیا۔
اجلاس میں پیش کیے گئے بجٹ کے مطابق گزشتہ انتظامیہ کے دورمیں مختص ’’نائٹ ڈیوٹی الائونس‘‘ جوتقریباً6ملین روپے تھا ایک سال میں بڑھتے ہوئے اخراجات کے بعدآئندہ مالی سال کے لیے 4ملین روپے اضافے سے 10.516ملین روپے مانگے گئے ہیں، انٹرنیٹ کے اخراجات جوگزشتہ بجٹ میں 2.6ملین روپے تھے رواں سال کے نظرثانی بجٹ میں 6ملین روپے ظاہرکرتے ہوئے آئندہ بجٹ میں 8ملین یعنی 80لاکھ روپے مانگ لیے گئے، گزشتہ بجٹ میں کورئیرسروس کی مدمیں تقریباً2لاکھ روپے خرچ ہوئے تھے رواں بجٹ میں تقریباً111لاکھ اورآئندہ بجٹ میں 15لاکھ روپے مانگے گئے ہیں، سیکیورٹی چارجز کی مد میں گزشتہ بجٹ میں رقم مختص نہیں تھی، ’’ایکسپریس‘‘نے اس معاملے پر یونیورسٹی کے ٹریژرارچوہدری محمد علی سے رابطے کی کوشش کی توان کے موبائل فون پر جواب ملاکہ وہ موجود نہیں، ایچ ای سی کے نمائندے غلام مجتبی ٰکیانی سے رابطہ کیاتوان کاکہناتھاکہ ایچ ای سی نے یونیورسٹی پرواضح کردیا کہ وہ یونیورسٹی کوگرانٹ 7سے 10فیصد اضافے کے ساتھ دے سکتی ہے جس قدراضافی گرانٹ یونیورسٹی مانگ رہی ہے اسے اپنی آمدنی میں اضافہ کرناچاہیے۔

0 comments

Write Down Your Responses