انتظامیہ عید میلاد النبیؐ کے جلوسوں کو مکمل سکیورٹی فراہم کرے،اور اہلسنت کے علماء کو کور کمیٹی کا ممبربنایا جائے،چیئرمین سنی اتحاد کونسل حامد رضا

فیصل آباد( سلیم شاہ ،چیف انوسٹی گیشن سیل ) ضلعی انتظامیہ تنظیمات اہلسنت کے ساتھ سوتیلی ماں جیسا سلوک کر رہی ہے۔ ہمارے علماء کو اجلاس میں بلا کر ان سے ناروا سلوک کیا جارہا ہے جو ہمیں کسی قیمت پر قابل قبول نہیں۔ ان خیالات کا اظہار سنی اتحاد کونسل کے چیئرمین صاحبزادہ حامد رضا نے تنظیمات اہلست سنت کی جانب سے ضلعی انتظامیہ کے خلاف بلائے گئے اجلاس کے شرکاء سے خطاب کے دوران کیا۔ انہوں نے کہا کہ ضلعی انتظامیہ عید میلاد النبیؐ کے جلوسوں کو مکمل سکیورٹی فراہم کرے اور اس سکیورٹی کے حوالے سے اہلسنت کے علماء کو کور کمیٹی کے ممبربنائے اورموجودہ کور کمیٹی کے ممبران کو فل الفور ہٹایا جائے اور اہلسنت کے صحیح نمائندہ علماء کرام کو سکیورٹی اجلاس میں مدعو کیا جائے۔ صاحبزادہ حامد رضا نے کہا کہ عید میلاد النبیؐ اہلسنت کا تہوار ہے جبکہ ضلعی انتظامیہ سکیورٹی کے حوالے سے جو اجلاس بلاتی ہے اس میں اہلسنت کے علماء کرام کو بلائے کی بجائے پولیس ٹاؤٹوں کو بلایا جاتا ہے جو ہمیں بالکل قبول نہیں۔ انہوں نے کہا کہ ضلعی انتظامیہ نے عید میلاد النبیؐ کے سلسلہ میں جو سکیورٹی پلان دیا ہے وہ ہمیں قطعا قابل قبول نہیں‘ ہم ضلعی انتظامیہ کو باور کروا رہے ہیں کہ عید میلاد النبیؐ کے جلوسوں کو مکمل سکیورٹی فراہم کی جائے اور اس سلسلہ میں ہم ایک فیصد پابندی کو بھی برداشت نہیں کریں گے۔ صاحبزادہ حامد رضا نے کہا کہ اگر ضلعی انتظامیہ عید میلاد النبیؐ کے جلوسوں کو سکیورٹی فراہم کرنے میں ناکام ہو گئی اور اس دن اگر کوئی ناخوشگوار واقع رونما ہوا تو اس کی تمام تر ذمہ داری ضلعی انتظامیہ پر ہو گی اور اہم موجودہ انتظامیہ کے خلاف عدالتوں میں جائیں گے۔صاحبزادہ حامد رضا نے کہا کہ ضلعی انتظامیہ فرقہ وارانہ لٹریچر کو فورا ہٹائے اور اس کے مرتکب افراد کو قرار واقعی سزا دے اور عید میلاد النبیؐ کے سلسلہ میں لگائے گئے بورڈ اور جھنڈوں کو اتارنے کا سلسلہ بند کرے۔ اجلاس میں اہلسنت تنظیموں کے رہنماؤں راشد محمود المعروف سدھے میاں‘ سید شاہد کاظمی‘ منیر نورانی‘ میاں کاشف‘ ملک سرفراز قادری‘ صاحبزادہ حسن رضا‘ پیر غلام مصطفی قادری نوشاہی‘ مولانا افضل قادری‘ بخش الٰہی کے علاوہ تنظیمات اہلسنت کے علماء کرام و مشائخ عظام کی کثیر تعداد نے شرکت کی۔

0 comments

Write Down Your Responses