اسلام تعمیری تفریح کی اجازت دیتا ہے

اسلام آباد( انویسٹی گیشن ٹیم ) اسلام تعمیری تفریح کی اجازت دیتا ہے،رسمی تعلیم کے ساتھ ، مبنی بر اخلاق اور تعلیم کی عملی تطبیق کے ساتھ غیرنصابی سرگرمیاں طلبہ کی صلاحیتوں میں نکھار پیداکرنے کا باعث بنتی ہیں۔اللہ تعالی کی تخلیق کردہ حسین و جمیل مناظر کو دیکھ کر اس کی فرمابرداری کرنی چاہیے۔ تاریخ کے طالب علم پر لازم کہ سابقہ اقوام کی باقیات کے مشاہدوں سے دروس و عبرحاصل کریں،ڈاکٹر عبدالمعزفضل تفصیلات کے مطابق بین الاقوامی اسلامی کے شعبہ سیرت و تاریخ(فیکلیٹی آف اصول الدین) کے طلبہ ، اساتذہ نے ٹیکسلا میوزیم،بودھ ازم کی درس گاہ،مالٹوں کے باغ اور خانپور ڈیم تعلیمی و تربیتی اور تفریحی یک روزہ دورہ کیا۔ جس میں اساتذہ نے طلبہ کو تفریح سے متعلق اسلامی آداب و اخلاق کے لوازمات اور ادیان باطلہ کے باقی ماندہ نقوش سے عبرت حاصل کرنے اور دین اسلام( جو کہ تا قیامت تک کی انسانیت کے لیے ضابطہ حیات ہے )کے علمبردار ہونے پراللہ تعالی کے شکرگذاری کا احساس اجاگر کرنے کی اہمیت پر گفتگو کی ۔ڈاکٹر عبدالمعزفضل نے طلبہ سے بات کرتے ہوئے کہاکہ اسلام تعمیری تفریح کی چنداں نفی نہیں کرتا بلکہ ضرورت اس بات کی ہے کہ اس تفریح کو بھی اسلامی کی جانب سے دی گئی اجازت اور بیان کردہ حدود و قیود میں محدود کیا جانا چاہیے۔انہوں نے کہا کہ شعبہ سیرت و تاریخ کے طلبہ جن میں چائنہ ،انڈونیشیا ،افغانستان ،پاکستان اور مصر و شام کے اساتذہ کا ایک ساتھ سفر کرنا مسلمانوں کے مابین اخؤت و مودت کا روشن مظہر ہے۔اسلام نے تمام مسلمانوں کو باہم بھائی بندی کا حکم دیا ہے اور مسلمانوں کو ایک جسد کی مانند کہا ہے جس کا واضح ثبوت بلاکسی امتیاز و تفریق کے آج کے اس تفریحی وتربیتی دورہ میں باہم مشترک و یک جان ہونے سے ثابت ہورہاہے۔ڈاکٹرعلی عبدالحفیظ نے اپنی گفتگو میں کہا کہ بودھ ازم کی درسگاہ کے مشاہدے سے یہ ثابت ہوا ہے کہ باطل ادیان تعلیم کی اہمیت و افادیت کے معترف تھے اور تعلیم کے شعبہ کو استوار کرنے کے لیے بھر پور اہتمام بھی کرتے تھے اس امر کو دیکھتے ہوئے مسلمانوں پر لازم ہوتاہے کہ دین اسلام کی حقانیت و صداقت کو جانتے ہوئے (جس کی پہلی وحی میں ہی تو پڑھ کا حکم دیاگیاہے)کہ وہ تعلیم میں بلاکسی تقسیم و تفریق کے بہتر سے بہتر تر کام کریں اور اس میں جدید علوم میں اپنی صلاحیتوں کو پیش کریں۔ اس تفریحی دورے میں شعبہ سیرت و تاریخ کے طلبہ و اساتذہ جن میں ڈاکٹر یسری عبدالعلیم ڈاکٹر محمود حسن نصار،ڈاکٹر خالد فؤاد،ڈاکٹر اکرم البدوی،ڈاکٹر احمد عبدالقادر ،مجاہد الحوامدہ سمیت شعبہ سیرت وتاریخ اور شعبہ دعوت و اسلامی ثقافت کے طلبہ کی کثیر تعداد شریک تھی۔ اس تعلیمی دورہ کے اہتمام وانصرام میں ڈاکٹر عبدالقادر ھارون(ایڈیشنل سٹوڈنٹ ایڈوائزر)اسٹنٹ پروفیسر ڈاکٹر عبدالمعز فضل،شعبہ سیرت و تاریخ کے طلبہ روح اللہ ریحان اور عتیق الرحمن پیش پیش تھے۔ اس تفریحی دورہ میں طلبہ کو باہم بھائی چارگی،مساوات ،حسن اخلاق اور حاصل کردہ تعلیم کو اپنی زندگیوں میں عملاًنافذ کرنے کی تعلیم دی گئی جبکہ تفرقہ بازی و عصبیت و تنگ نظری اور بد عملی و بد اخلاقی اور اللہ تعالی کی نافرمانی سے روکنے کی تعلیم دی گئی۔

0 comments

Write Down Your Responses