محمد شہباز شریف کی خصوصی ہدایات پر فیصل آباد کے اضلاع میں ڈویلپمنٹ پروگرامز کے تحت کثیر فنڈز سے ترقیاتی سکیمیں مکمل کی جاری ہیں،چیئرمین پلاننگ اینڈ ڈویلپمنٹ بورڈپنجاب محمد عرفان الہی

فیصل آباد (سلیم شاہ ،چیف انوسٹی گیشن سیل)وزیر اعلی پنجاب محمد شہباز شریف کی خصوصی ہدایات پر فیصل آباد ڈویژن کے چاروں اضلاع میں مختلف ڈویلپمنٹ پروگرامز کے تحت 5 ۔ ارب 93 کروڑ 72 لاکھ روپے کے فنڈز سے ترقیاتی سکیمیں مکمل کی جاری ہیں جن کی تکمیل سے عوام کو تعلیم و صحت ‘ ذرائع مواصلات ‘ واٹر سپلائی ‘ سیوریج اور سپورٹس سمیت دیگر شعبوں میں بہتر بنیادی سہولتیں میسر آئیں گی ۔یہ بات چیئرمین پلاننگ اینڈ ڈویلپمنٹ بورڈپنجاب محمد عرفان الہی کی زیر صدارت کمشنر آفس میں منعقدہ اجلاس کے دوران بتائی گئی جس میں فیصل آباد ‘ جھنگ ‘ ٹوبہ ٹیک سنگھ ‘ چنیوٹ کے اضلاع میں جاری اور نئی ترقیاتی سکیموں پر عملدرآمد کی رفتار کا جائزہ لیا گیا ۔ اجلاس میں ڈویژنل کمشنر سردار اکرم جاوید ‘سینئر چیف (کوارڈینیشں)جاوید لطیف ،ڈی سی اوز نور الامین مینگل ‘ مقبول احمد دھاولہ ‘ ڈاکٹر فرخ مسعود ‘ ڈاکٹر ارشاد احمد ‘ ایم ڈی واسا سید زاہد عزیز اور منصوبوں پر عملدرآمر کرنے والے محکموں کے انجینئرز نے شرکت کی ۔ اجلاس کے دوران بتایا گیا کہ وزیر اعلی پنجاب کے خصوصی ڈسٹرکٹ پیکج کے تحت ڈویژن میں 43 میگا پراجیکٹ پر 3 ۔ تین ارب 20 کروڑ روپے خرچ کئے جائیں گے جبکہ سالانہ ترقیاتی پروگرام کے تحت مختلف علاقوں میں کالجز کے قیام ‘ بنیادی مراکز صحت ، ہسپتالوں کا درجہ بڑھانے ، واٹر سپلائی اور دیگر سیکٹرز میں 105 ترقیاتی سکیموں پر دو ارب گیارہ کروڑ 83 لاکھ روپے خرچ کئے جارہے ہیں اسی طرح ڈسٹرکٹ ڈویلپمنٹ پروگرام کے لئے 37 کروڑ روپے کی لاگت سے 147 سکیمیں مکمل کی جارہی ہیں جبکہ ڈویژن کے سلولوں میں مسنگ فیسلٹیز کی فراہمی کی 310 سکیموں پر 24 کروڑ 70 لاکھ روپے لاگت آئیگی ۔ اس موقع پر بتایا گیا کہ چاروں اضلاع کے مختلف علاقوں بعض سکیمیں مکمل کر لی گئی ہیں جبکہ دیگر پرتیز رفتاری سے کام جاری ہے ۔چیئرمین پی اینڈ ڈی نے منصوبوں پر عملدرآمد کرنے والے محکموں کے افسران سے کہا کہ وہ ترقیاتی کام کی رفتاری مزید تیز کریں اور اگر کسی جگہ کوئی رکاوٹ یا مسئلہ درپیش ہے تو اسکی بروقت نشاندہی کی جائے تاکہ فوری اقدامات کے تحت ان کا ازالہ کرکے سکیموں کی تکمیل کویقینی بنایا جا سکے ۔ انہوں نے ڈی سی اوز سے کہا کہ وہ ترقیاتی منصوبوں کی باقاعدگی سے مانیٹرنگ کرکے اعلی تعمیراتی معیار پر نظر رکھیں اور فنڈز کا شفاف استعمال ہونا چاہئے ۔ اجلاس کے دوران ریونیو ریکارڈ کی کمپیوٹرائزیشن کے امور بھی زیر بحث آئے اور صدر اجلاس نے ہدایت کی کہ کمپیوٹر میں ڈیٹا مرتب کرنے کے لئے ریونیو ریکارڈ کی فراہمی میں تاخیر نہیں ہونی چاہئے ۔ انہوں نے چاروں اضلاع میں فیسلیٹی سنٹر کی عمارتوں کی تعمیر و تزئین کے امور کا بھی جائزہ لیا اور کہا کہ ان منصوبوں کی تکمیل کی پیش رفت پر خصوصی توجہ دیں ۔

0 comments

Write Down Your Responses