چہلم حضرت امام حسینؓ کے سلسلہ میں 17 جلوس و 17 مجالس کا انعقاد ہو گا ۔ 11 مقامات کو انتہائی حساس اور 5 حساس قرار دے دئیے گئے

رحیم یار خان (انویسٹی گیشن ٹیم) چہلم حضرت امام حسینؓ کے سلسلہ میں 17 جلوس و 17 مجالس کا انعقاد ہو گا ۔ 11 مقامات کو انتہائی حساس اور 5 حساس قرار دے دئیے گئے ۔ سکیورٹی کے لئے پولیس سمیت 2200 سکیورٹی اہلکار تعینات ۔ موٹر سائیکل پر ڈبل سواری ، لوڈ سپیکر ، وال چاکنگ ، اسلحہ کی نمائش اور پانچ یا پانچ سے زائد افراد کے ایک جگہ جمع ہونے پر پابندی عائد ۔ ضلع کے داخلی اور خارجی راستوں کی ناکہ بندی کر لی گئی پولیس گشت میں اضافہ کر دیا گیا ۔ جلوس و مجالس کے روٹس اور مقامات کی ٹیکنیکل سرچ کے جدید آلات اور سنیفر ڈاگ استعمال کئے جائیں گے ۔ تفصیل کے مطابق ضلع رحیم یار خان میں کل 24 دسمبر بروز منگل پاکستان بھر کی طرح چہلم حضرت امام حسینؓ پوری عقیدت اور احترام کے ساتھ منایا جائے گا جس کی سکیورٹی کے لئے ضلع رحیم یار خان پولیس نے ڈی پی او سہیل طفر چٹھہ کی ہدایت پر سکیورٹی کے فول پروف انتظامات ترتیب دئیے ہیں تا کہ اس موقع پر کسی بھی قسم کا کوئی ناخوشگوار واقع رونما نہ ہو سکے اور دہشت گرد اور شر پسند اپنے مذموم مقاصد کو پایا تکمیل تک نہ پہنچا سکیں ۔ ضلع رحیم یار خان میں چہلم حضرت امام حسینؓ کے سلسلہ میں 17 جلوس جس میں اے کیٹگری کے 4 ، بی کیٹگری کے 2 اور سی کیٹگری کے 11 جلوس شامل ہیں نکالے جائیں گے یہ جلوس غلام یسین شاہ کے زیر اہتمام بڈھن شاہ محلہ کانجواں رحیم یار خان سے ، نیاز شاہ کے زیر اہتمام بھی محلمہ کانجواں رحیم یار خان سے ، غلام یسین کے زیر اہتمام محلہ کانجواں رحیم یار خان سے ، نیاز حسین شاہ کے زیر اہتمام محلہ کانجواں سے ، مٹھوخان مستوئی کے زیر اہتمام ٹرسٹ کالونی رحیم یار خان سے ، سید علی رضا شاہ کے کے زیر اہتمام لنگر حسینی رحیم یار خان سے ، سید مہتاب حسین شاہ کے زیر اہتمام ٹبی لاڑاں رحیم یارخان سے ، فدا حسین شاہ کے زیر اہتمام بہودی پور ماچھیاں سے ، جلال الدین شاہ کے زیر اہتمام کوٹ کموں شاہ سے ، بکھو شاہ پلیہ کے زیر اہتمام آدم والی سے بشیر احمد کے زیر اہتمام امام بارگاہ امام بار گاہ بھٹہ واہن سے ، مقبول حسین کے زیر اہتمام امام بار گاہ احمد پور لمہ سے ، مجاہد حسین نقوی کے زیر اہتمام امام بارگاہ چوک بہادر پور سے ، سید مہتاب علی شاہ کے زیر اہتمام احمد پور لمہ سے ، سید حضور بخش شاہ کے زیر اہتمام کوٹسبزل سے ، سید اختر حسین کے زیر اہتمام بھونگ سے سید عمران اقبال شاہ کے زیر اہتمام دربار حسین خانپور سے محمد رفیق کے زیر اہتمام آستانہ لوہاراں خانپور سے اور سید انوار حسین شمسی کے زیر اہتمام لیاقت پور سے نکالے جائیں گے جن میں ضلع کا مرکزی جلوس تعزیہ لنگر حسینی سے صبح 10 بجے برآمد ہو کر اپنے مقررہ روٹ پرانا ڈاک خانہ بازار ، اکبر مسجد چوک ، بیلجیئم چوک اور ریلوے چوک سے ہوتا ہوا امام بارگاہ لنگر حسینی پر 5:30 بجے شام اختتام پذیر ہو گا جب کہ ضلع بھر میں چہلم امام حسینؓ کے سلسلہ میں 17 مجالس کا انعقاد ہو رہا ہے جن میں منیراحمد کے زیر اہتمام امام بارگاہ حیدری ٹرسٹ رحیم یار خان میں ، محمد دین شاکر کے زیر اہتمام گلور مسو خان رکن پور میں ، سید نظر حسین شاہ کے زیر اہتمام امام بار گاہ دولت پور میں ، سید طالب حسین کے زیر اہتمام امام بارگاہ موضع نوناری میں ، مسماتہ ست بھرائی کے زیر اہتمام پلو شاہ میں ، سیدتنویر حسین شاہ کے زیر اہتمام مرکزی امام بار گاہ صادق آباد میں ، بشیر احمد کے زیر اہتمام امام بارگاہ بھٹہ واہن میں ، مجاہد حسین نقوی کے زیر اہتمام امام بارگاہ چوک بہادر پور میں سید غلام مہدی شاہ کے زیر اہتمام امام بارگاہ احمد پور لمہ میں ، سید فدا حسین شاہ کے زیر اہتمام امام بارگاہ رنگ پور میں سید حضور شاہ کے زیر اہتمام امام بارگاہ کوٹسبزل میں سید عمران شاہ کے زیر اہتمام امام بارگاہ دربارحسین خانپور میں ، ساجد حسین کے زیر اہتمام آستانہ لوہاراں خانپور میں ، عاشق حسین کے زیر اہتمام محلہ طوطا رام خانپور میں ، سید فدا حسین شاہ کے زیر اہتمام آستانہ یار شاہ خانپور میں ، سجاد حسین کے زیر اہتمام صوبے دا شہر میں اور غلام قاسم کے زیر اہتمام آستانہ حبیب کوٹ شاہاں میں منعقد ہوں گی جن کی سکیورٹی کے لئے پولیس کی جانب سے پولیس سمیت 2200 سکیورٹی اہلکار تعینات کئے گئے ہیں جن میں ضلعی پولیس ، ایلیٹ فورس ، پولیس رضا کاران ، سپیشل پولیس ، اہل تشیع ویلنٹیئرز ، سول ڈیفنس اور دیگر شامل ہیں جبکہ اس موقع پر سپیشل برانچ کے اہلکار جدید آلات اور سنیفر ڈاگز کے زریعے جلوس کے روٹس اور مجالس کے مقامات کی سرچ کر کے قبل از وقت اس بات کو یقینجی بنائیں گے کہ ان جگہوں پر کسی قسم کا بارودی مواد تو نصب نہیں ہے ۔ جبکہ اس موقع پر موٹر سائیکل پر ڈبل سواری ، وال چاکنگ ، اسلحہ کی نمائش ، لوڈ سپیکر کے غیر قانونی استعمال پانچ یا پانچ سے زائد افراد کے ایک جگہ اکھٹا ہونے پر بھی پابندی عائد رہے گی اور ضلع بھر میں دفعہ 144 کا نفاذ موئثر رکھاجائے گا ۔ ضلع میں امن مان کی صورت حال کو قابو میں رکھنے کے لئے ضلع کے داخلی اور خارجی راستوں پر ناکہ بندی کر لی گئی ہے اور ضلع میں داخل ہو نے والی مشکوک گاڑیوں اور افراد کی اسنیپ چیکنگ کی جا رہی ہے جبکہ اندرون ضلع پولیس کا گشت بڑھا دیا گیا اور مشکوک افراد اور مقام ت کی کڑی نگرانی کی جا رہی ہے ۔ جبکہ چہلم محرم الحرام کے سلسلہ میں ضلع میں 11 مقامات جن میں امام بارگاہ لنگر حسینی رحیم یار خان ، امام بارگاہ بہودی پور ماچھیاں ، امام بارگاہ رکن پور ، مرکزی امام بار گاہ پرانا صادق آباد ، امام بارگاہ فتہ کٹہ صادق آباد ، امام بارگاہ بھٹہ واہن صادق آباد ، آستانہ ٹھٹھاراں خانپور ، امام بارگاہ دربار حسین خانپور ، امام بارگاہ غازی پور ظاہر پیر امام بارگاہ خانبیلہ شیدانی اور امام بارگاہ ٹھل حمزی ترنڈہ محمد پناہ کو انتہائی حساس جبکہ امیر معاویہ چوک صادق آباد ، برج کیفے سجاول صادق آباد ، جن پور ، رکن پور اور تتار چاچڑ ظاہر پیر کو حساس قرار دیا جا چکا ہے اور ان مقامات پر پولیس کے اضافی دستے تعینات کئے گئے ہیں ۔ اس سلسلہ میں ڈی پی او آفس میں ایک کنٹرول روم بھی قائم کیا گیا ہے جو کہ 24 گھنٹے فعال رہ کر ضلع بھر سے امن امان کی صورت حال پر نظر رکھے ہوئے ہے ۔

0 comments

Write Down Your Responses