پریس کلب بہاول پور گذشتہ 18سال سے مسائل کی آماجگاہ بن گیا

بہاول پور (ایم وی این نیوز ) پریس کلب بہاول پور گذشتہ 18سال سے مسائل کی آماجگاہ بن گیا ‘ پسند نا پسند کی بنیاد پر پریس کلب کے کرتا دھرتاؤں نے اپنی جی حضوری کرنیوالوں کو پریس کلب کی ممبر شپ دی ‘ پریس کلب کے کرتا دھرتاؤں نے لوٹ مار و کرپشن کی وہ داستان رقم کی جسے سن کر کسی بھی ذی شعور شہری کی روح کانپ جائے ‘ اپنی ذاتی انا کی تسکین کیلئے پریس کلب بہاول پور کو دو نام نہاد گروپوں نے انتظامیہ کیساتھ ملکر سیل (بند) کرا دیا ‘ پریس کلب کو مختلف ادوار میں دی جانیوالی حکومتی گرانٹس کا فی الفور آڈٹ کرانے کا مطالبہ ‘ پریس کلب جیسے مقدس ادارے کو لوٹنے والوں کی کرپشن سامنے لائی جائے ‘ تب تک پریس کلب کو سیل ہی رہنے دیا جائے‘ ممبر پریس کلب کی جانب سے اعلیٰ حکام کو دی گئی درخواستیں میں مطالبہ۔ تفصیل کے مطابق ممبر بہاول پور پریس کلب بہاول پور محمد شکیل تسکین نے وزیر اعلیٰ پنجاب ‘ چیف سیکرٹری پنجاب ‘ کمشنر بہاول پور ڈویژن بہاول پور کو درخواست نمبری-04-12-2013 PA/405اور ڈی سی او کو درخواست نمبری 28101/04-12-2013دیتے ہوئے موقف اختیار کیا کہ پریس کلب بہاول پور کے کرتا دھرتاؤں نے آج تک کسی بھی جیتنے والے صدر کو کلب کا ریکارڈ منتقل نہ کیا جبکہ مختلف ادوار بلخصوص 1995ء سے 2013ء تک میں صوبائی و وفاقی سطح پر پریس کلب کو دی جانیوالی سرکاری و غیر سرکاری گرانٹس کا حساب لیا جانا وقت کی اہم ضرورت ہے جس سے شعبہ صحافت کو کرپشن سے پاک کرنے میں مدد ملنے کیساتھ ساتھ کلب کے مستقل کرتا دھرتاؤں سمیت دیگر آنیوالوں کیلئے مثال و مشعل راہ ثابت ہو گی اور آئین و قانون کی حکمرانی قائم کرنے میں بھی مدد ملے گی ۔ کمشنر آفس میں کمشنر بہاول پور ڈویژن بہاول پور سے بالمشافہ ملاقات میں کمشنر بہاول پور ڈویژن نے اس امر کا یقین دلایا کہ پریس کلب کے معاملات کی درستگی کیلئے ڈی سی او بہاول پور کو مقرر کر دیا گیا اور پریس کلب کو دی جانیوالی سرکاری و غیر سرکاری گرانٹس کا بھی حساب لیا جائیگا جبکہ محمد شکیل تسکین ممبر پریس کلب بہاول پور نے اپنی درخواست کمشنر بہاول پور ڈویژن بہاول پور میں واضح انداز میں لکھا کہ پریس کلب سیل (بند) ہونے کے بعد یہ ایک نادر موقع ہے اور کلب کے مالیاتی آڈٹ ‘ کلب کے دیگر سامان ایل ای ڈی (ٹی وی)‘ کرسیاں ‘ میزیں ‘ گریلیں ‘ پانی کی موٹر ‘ پریس کلب میں لگے درخت اور حتیٰ کہ کلب کی عمارت میں لگے شیشوں تک کی تفصیل اور مختلف مدات میں خراچ کی جانیوالی رقوم کا فی الفور حساب لیا جائے کیونکہ پریس کلب پر قابض ومستقل ٹولہ پسند نا پسند کی بنیاد پر کسی بھی حقیقی و عامل صحافی کو کلب کی ممبر شپ سے محروم رکھے ہوئے ہے اور سرکاری گرانٹس کو مال مفت دل بے رحم کی طرح لوٹتا رہا ہے ۔ درخواست کے مطابق محمد شکیل تسکین نے کمشنر و ڈی سی او بہاول پور سے استدعا کی ہے کہ کلب کے آڈٹ کے حوالے سے فی الفور ایک انکوائری کمیٹی تشکیل دی جائے اور اندر 7یوم میں کلب کے مالیاتی آڈٹو دیگر معاملات کی انکوائری کر کے کلب کی گرانٹس کو لوٹنے والوں کے مکروہ چہرے سامنے لائیں جائیں اور اگر آئند 7یوم میں مقدس پیشہ صحافت اور پریس کلب بہاول پور کی سر بلندی کیلئے کوئی کارروائی نہ کی گئی تو ملک کی اعلیٰ عدلیہ سے رجوع کیا جائیگا اور تمام فریقین ملک کے اعلیٰ و معزز عدلیہ کے سامنے جوابدہ ہونگے 

0 comments

Write Down Your Responses