سانگھڑ سے پولیو کا خاتمہ تو نہ ہوا مگر پولیو نہ پینے والو ں میں اضافہ ہوگیا

سانگھڑ(انویسٹی گیشن ٹیم) سانگھڑ میں پولیو کے 130 روانڈ ،کمل ہونے کے باوجود بھی سانگھڑ سے پولیو کا خاتمہ تو نہ ہوا مگر پولیو نہ پینے والو ں میں اضافہ ہوگیا پولیو ٹیم بھی وقت پاس کرنے لگی ڈی سی سانگھڑ سکندر علی خشک کو مجبورا کہنا پڑا کہ راتوں رات کچھ نہیں ہوسکتا سانگھڑ میں گزشتہ کئی سالوں سے پولیو مہم چل رہی ہے جس پر کروڑوں روپے خرچ آچکے ہیں ہر میٹنگ میں یہ کہا جاتا ہے کہ سانگھڑ ریڈ زون سے باہر آگیا ہے سانگھڑ میں پولیو کا مکمل خاتمہ ہوچکا ہے یہ فائنل روانڈ ہوگا مگر میٹنگ کے فورا بعد پتہ چلتا ہے کہ سانگھڑ کے کئی علاقوں میں ایک عرصہ سے پولیو ٹیم ہی پولیو کے قطرے پلانے نہیں گئی ڈی سی سانگھڑ سکندر علی خشک اے ڈی سی ٹو دیدار بلوچ کے ہمراہ جب سو ل ہسپتال پہنچے تو محکمہ صحت کے عملے نے ان کا شاندار استقبال کیا اس موقع پر ڈی سی سکندر علی خشک نے بچوں کو پولیو کے قطرے پلا کر پولیو مہم کا افتتاح کیا اس موقع پر بچوں کے والدین نے ڈی سی سے شکایت کی کہ وہ شہر میں رہتے ہیں مگر ان کے حاں پولیو ٹیم بچوں کو قطرے پلانے نہیں آتی جس پر ڈی سی سکندر علی کشک نے ناراضگی کا اظہار کیا اس موقع پر ڈی سی نے میڈیا سے بات کرتے ہوئے کہا کہ سندھ بھر کی پوری مشنری پولیو کے خاتمے کے لئے کام کر رہی ہے میڈیا چاہتی ہے کہ ان کو فوری رزلٹ دیا جائے یہ کام راتوں رات نہیں ہوگا اس کے خاتمے کے لئے ٹائم نہیں دیا جاسکتا ان کا کہنا تھا کہ ان کے آنے سے قبل سانگھڑ میں ریفوزر کی تعداد بہت زیادہ تھی مگر اب کم ہو رہی ہے ڈی ایچ او نزیز شیخ نے پولیو کے قطرے نہ پلانے والی ٹیم کے خلاف انکواری کا حکم دے دیا ان کا کہنا تھا کہ یونی سیف کی ٹیم نے خود وزت کیا ہے اب سانگھڑ میں ریفوزر مین کمی واقع ہورہی ہے

0 comments

Write Down Your Responses