بائیوگیس سے بجلی پیدا کرنے کے لئے پلانٹس کی تعمیر شروع کردی گئی،ہالینڈ کی مالی معاونت،اوروِن راک انٹرنیشنل کا تکنیکی تعاون

فیصل آباد (چیف انویسٹی گیشن) پاکستان گھریلوبائیوگیس پروگرام کے تحت بائیوگیس سے بجلی کی پیداوار کیلئے 50اور 100کیوبک میٹر کے بائیوگیس پلانٹس کی تعمیر شروع کردی گئی ہے۔ جس کیلئے آغاز میں50اور100کیوبک میٹر کے 10 بائیوگیس پلانٹ لگائے جا رہے ہیں ۔ ان بائیوگیس پلانٹس کی مدد سے 5تا10کلوواٹ تک کے جنریٹر چلائے جاسکیں گے۔یہ بائیوگیس پلانٹ تحقیقی مقاصد کیلئے لگائے جارہے ہیں تاکہ ان کی تعمیر اور استعمال سے حاصل ہونیوالے تجربے اور اعداد وشمار کی بنیاد پربڑے بائیوگیس پلانٹس کی تعمیر شروع کرنے کیلئے حکمت عملی تشکیل دی جاسکے۔ پاکستان گھریلوبائیوگیس پروگرام کے تحت فیصل آباد سمیت وسطی پنجاب کے 12اضلاع میں گھریلو استعمال(کھانا پکانے) کیلئے پہلے ہی تین ہزار سے زائد بائیوگیس پلانٹس لگائے جاچکے ہیں۔جبکہ گزشتہ سال سے ڈیزل پر چلنے والے زرعی ٹیوب ویل بائیوگیس پر منتقل کرکے آبپاشی کیلئے پانی کی دستیابی کو آسان بنانے کا سلسلہ بھی شروع کردیا گیا ہے۔ جس کیلئے ابتک ڈیڑھ سو سے زائد بائیوگیس پلانٹ لگائے جاچکے ہیں۔ عالمی معیار کے مطابق بائیوگیس پلانٹ بنانے اور استعمال کنندگان کی تکنیکی مدد کیلئے مقامی سطح پر تشکیل دی گئی40 بائیوگیس تعمیراتی کمپنیاں اور 400سے زائد تربیت یافتہ افراد پاکستان گھریلو بائیوگیس پروگرام سے منسلک ہیں۔جبکہ 1200سو سے زائد افراد کو اس شعبے کی ترقی سے مقامی سطح پر روزگار حاصل ہوا ہے۔ قومی سطح پر عوامی فلاح کیلئے کام کرنیوالی \"این جی او\"رورل سپورٹ پروگرامز نیٹ ورک (RSPN) کی جانب سے بائیوگیس کے استعمال کو فروغ دیکر دیہی آبادی کا معیار زندگی بہتر بنانے اور خودانحصاری پرمبنی بائیوگیس سیکٹر کی تشکیل کیلئے اس پروگرام کا آغاز2009میں کیا گیا تھا۔ جس کیلئے اسے ہالینڈ کی مالی معاونت جبکہ نیدرلینڈ ڈویلپمنٹ آرگنائزیشن اوروِن راک انٹرنیشنل جیسے عالمی اداروں کا تکنیکی تعاون حاصل ہے۔

0 comments

Write Down Your Responses