ضلع چنیوٹ میں کھلے پٹرول اور گیس ریفلنگ کا دھندہ نہ رک سکا پورا شہر بارود کاڈھیر بناگیا

چنیوٹ (چیف انویسٹی گیشن) ضلع چنیوٹ میں کھلے پٹرول اور گیس ریفلنگ کا دھندہ نہ رک سکا پورا شہر بارود کاڈھیر بنا ہوا ہے مگر متعلقہ حکام کاروائی کی بجائے لفظی جمع خرچ پر جان چھڑوالیتے ہیں۔ان خیالات کا اظہار عامر صدیقی جوائنٹ سیکرٹری پاکستان لبرٹی فورم نے گذشتہ روز میڈیا سے شہری مسائل پر گفتگو کرتے ہو ئے کیا انہوں نے کہا کہ اسوقت ضلع چنیوٹ میں ڈیڑھ سو کے قریب منی پٹرول پمپ جبکہ پچاس کے قریب گیس ریفلنگ اسٹیشنز قائم ہیں اور اس سلسلہ میں متعدد بار اسسٹنٹ کمشنر چنیوٹ شمائلہ منظور کو ان برود کے بیوپاریوں کے کلاف شکایات بھی کیں اور تحریری طور پر درخواست بھی ارسال کی مگر ان غیر قانونی دھندہ کرنے والوں کے خلاف کوئی کاروائی عمل میں نہ لائی گئی ہے بلکہ موصوفہ نے خانہ پوری کرتے ہوئے شہر کے چند پٹرول پمپ جو کہ کافی عرصہ سے زائد قیمتوں پر پٹرول سیل کر رہے تھے کے خلاف حسب توفیق جرمانے کرکے مخصوص میڈیا گروپ کی مدد سے سب اچھے کی رپورٹ اعلیٰ حکام کو پیش کر کے خود کو بری الذمہ کر لیا ہے مگر عاشورہ محرمالحرام کے ان مخصوص ایام میں پورے ضلع میں کھلےُ پٹرول کی فروخت انتہائی خطرناک ہے جو کسی بھی حادثے یا سانحے کا سبب بن سکتی ہے ایسے میں ان غیر قانونی کاروبار کرنے والوں کے خلاف کاروائی نہ کرنا سمجھ سے بالا تر ہے ۔انہوں نے بتایا کہ پنجاب بھرکے باقی تمام اضلاع میں محرم ا لحرام کی آمد کیساتھ ہی کھلے پٹرول،تیزاب،گیس ریفلنگ کے کاروبا ر پر مکمل طور پر پابندی عائد کر دی گئی ہے جبکہ ہمارے ضلع کی انتظامیہ نے ابھی تک اس سلسلہ میں کوئی عملی اقدام کیا ہے اور نہ اس دھندہ کو کرنے والے افراد کے خلاف پھندہ تیار کر سکے ہیں جو کہ انکی مبینہ غفلت کا منہ بولتا ثبوت ہے انہوں نے وزیر اعلیٰ پنجاب میاں شہباز شریف ،دویژنل کمشنر فیصل آباد، چیف سیکرٹری پنجاب سے مطالبہ کیا ہے کہ اسسٹنٹ کمشنر چنیوٹ کو فوری طور پر تبدیل کیا جائے اور کسی فرض شناس آفیسر کی تعیناتی کو یقینی بنایا جائے۔

0 comments

Write Down Your Responses