لاکھوں روپے مالیت سے خرید کیا گیا سامان محکمہ سپورٹس کی غفلت اور لاپروائی سے کباڑ کے ڈھیر میں تبدیل ‘

بہاول پور (ڈپٹی انچارج انویسٹی گیشن ) لاکھوں روپے مالیت سے خرید کیا گیا سامان محکمہ سپورٹس کی غفلت اور لاپروائی سے کباڑ کے ڈھیر میں تبدیل ‘ کمشنر و ڈی سی او بہاول پور فوری تحقیقات کرائیں ۔ تفصیل کے مطابق سابق ڈی سی او بہاول پور ڈاکٹر نعیم رؤف اور موجودہ سٹیڈیم انچارج مقصود الحسن جاوید کی مبینہ ملی بھگت سے اور بناء ٹینڈر کے کئی ملین روپے کا سپورٹس کا سامان جو کہ ہلکی کوالٹی کا ہے کو خرید کیا گیا تھا ۔ بتایا جاتا ہے کہ سپورٹس کا یہ سامان جن میں ہاکیاں ‘ گلبز ‘ ہیلمٹ و دیگر اشیاء شامل ہیں کو دو مختلف ادوار میں خرید کیا گیا تھا جبکہ پہلے فیز میں کئی بوائز اور گرلز سکولوں کو اس غیر معیاری اور ناقص سامان کی ترسیل کر دی گئی تھی تاہم سکولوں کو ترسیل کیا جانیوالا سامان ناکارہ ہونے کے باعث کسی بھی استعمال میں نہ آ سکا اور اسی طرح دوسرے فیز میں سپورٹس کا سامان سٹیڈیم بہاول پور کے سٹور میں پڑے پڑے مٹی کا ڈھیر بن چکا ہے جبکہ بتایا جاتا ہے کہ سپورٹس کا یہ سامان مبینہ طور پر بناء کسی ٹینڈر کے سابق ڈی سی او بہاول پور ڈاکٹر نعیم رؤف اور مقصود الحسن جاوید اور دیگر کئی اہم شخصیات کے آشیرباد سے خرید کیا گیا تھا تاہم اب اسکی ذمہ داری لینے کیلئے کوئی بھی افسر تیار نہیں جسکی وجہ سے اب یہ لاکھوں روپے کا سپورٹس کا سامان جو کہ پہلے سے ہی ناکارہ تھا سٹیڈیم بہاول پور کے سٹور میں پڑے پڑے مٹی کے ڈھیر میں تبدیل ہو چکا ہے اور حکومتی خزانے ‘ کھیلوں اور کھلاڑیوں کیلئے شدید نقصان دہ ثابت ہوا ہے ۔ بہاول پور کے شہریوں ‘ محمد اقبال ‘ حسیب رضا ‘ عبدالرحمن ‘ محمد سلیم و دیگر نے کمشنر بہاول پور ڈویژن اور ڈی سی او بہاول پور سے اس معاملہ کی فوری و غیر جانبدارانہ انکوائری کا مطالبہ کیا ہے ۔ دریں اثناء سٹیڈیم انچارج مہر رشید سے انکا موقف جاننے کیلئے انکے موبائل نمبری 0302-6528100پر رابطہ کی کوشش کی گئی تو انہوں نے کال اٹینڈ نہ کی جبکہ اس حوالے سے دیگر سپورٹس افسران سے انکا موقف جاننے کیلئے بھی روابط کئے گئے مگرانہوں نے کہا کہ ہمارے افسران ہی اس سلسلہ میں کوئی جواب دے سکتے ہیں ۔

0 comments

Write Down Your Responses