کھیتوں میں کام کرتے کسان کو اچانک مٹی میں دبا قبر کا کتبہ مل گیا

میڈرڈ(ایم وی این نیوز)ماہرین لسانیات دور قدیم کی کئی زبانوں کو سمجھنے کی صلاحیت حاصل کر چکے ہیں لیکن حال ہی میں سپین کے ایک کسان کے کھیت سے ایک پتھریلا کتبہ دریافت ہوا تو اس پر لکھی ز بان دیکھ کر دنیا بھر کے ماہرین چکرا کر رہ گئے ہیں۔ ماہرین کا خیال ہے کہ اس کتبے کا تعلق صدیوں قبل کے دور سے ہے اور اس پر لکھی زبان غالباً قدیم دور کی ہسپانوی، یونانی، آئیبیرین اور کنانائت زبانوں کا مجموعہ ہے۔ سائنسی جریدے اینٹیکوئٹی میں شائع ہونے والی تحقیق کے مطابق اس کتبے کو ’سٹیلا آف مونٹورو‘ کا نام دیا گیا ہے۔ اس کی لمبائی تقریباً پانچ فٹ اور چوڑائی تقریباً تین فٹ ہے اور غالباً اسے نویں سے تیسری صدی عیسوی کے دوران کسی وقت تیار کیا گیا۔دلچسپ بات یہ ہے کہ 15 سال قبل جب ایک دن کسان اپنے کھیت میں ہل چلا رہا تھا تو یہ کتبہ دریافت ہوا لیکن اس نے اسے بے وقعت پتھر جان کر کھیت کے کنارے پھینک دیا۔ دوسال بعد ایک سرکاری اہلکار کی نظر اس پر پڑی تو وہ اس پر لکھے عجیب و غریب حروف کو دیکھ کر حیران ہوا اور اسے مونٹورو آرکیالوجیکل میوزم پہنچا دیا۔ وہاں یہ مزید آٹھ سال تک پڑا رہا۔

,

0 comments

Write Down Your Responses