چین میں روبوٹ اب عدالتی امور انجام دینگے

چین (ایم وی این نیوز) چین میں اب مقدمات کا فیصلہ روبوٹ پولیس کریگی اور لوگوں کو گرفتاری کے وارنٹ بھی جاری کریگی۔ یہ روبوٹ 3فٹ بلند ہونگے اور سڑکوں پر ”چل پھر “رہے ہونگے۔عالمی میڈیا کے مطابق ان کی شکلیں انسان جیسی بنائی گئی ہیں اور یہ گردن بھی گھما سکتے ہیں۔ روبوٹ معاملات کا جائزہ لیں گے ، حقائق کی چھان بین کرینگے اور پھر سزا سنائیں گے۔گرفتاری کے وارنٹ بھی جاری کرسکیں گے اور کسی کو مجرم بھی ٹھہرا سکیں گے۔چینی صوبے ڑیانگ سو میں سب سے پہلے ان کا تجربہ کیا گیا اب تک یہ روبوٹ 15ہزا ر مقدمات کا جائزہ لے چکے ہیں۔ ان میں ٹریفک خلاف ورزیاں سب سے اولین فہرست پر ہیں۔ بہت سے معاملات میں انہوں نے ڈرائیوروں کو اپنی غلطیاں ٹھیک کرنے کی بھی ہدایت دی۔روبوٹ نے بلدیاتی حکومتوں کی بھی مدد کی۔ ان کے بارے میں رائے عامہ ملی جلی ہے۔ چند افراد کا کہنا تھا کہ روبوٹ کی مصنوعی ذہانت کافی نہیں۔ فیصلے میں ذرا سی غلطی کے بھیانک نتائج برآمد ہونگے اس لئے عدالتی شعبے میں روبوٹ پر اعتبار کرنا بڑی غلطی ہوگی۔

,

0 comments

Write Down Your Responses