سیلزٹیکس،ہوٹلز،کورئیر،کنسٹرکشن،بیوٹی پارلرز،پراپرٹی ڈیلرز،انشورنس،سٹاک بروکرز،ایڈورٹائزمنٹ،کیبل،کسٹم ایجنٹس،کلینکس،رینٹ کار،ڈیلرز،سیکورٹی کمپنیز،ٹول مینوفیکچرنگ،انٹرنیشنل ان کمنگ کالز،آرکیٹیکٹ ،فیشن ڈیزائنرز،شےئرٹرانسفرایجنٹس،ودیگر سروسز ٹیکس میں شامل

فیصل آباد (سلیم شاہ ،چیف انوسٹی گیشن سیل)پنجاب ریونیواتھارٹی کے زیراہتمام مختلف سروسز پر سیلز ٹیکس کی وصولی کے لئے پیشرفت کی جارہی ہے جس کے لئے صوبائی سیلز ٹیکس کے نظام پر عملدرآمد کے سلسلے میں اسسٹنٹ کمشنرز کو ذمہ داریاں سونپی گئی ہیں۔یہ بات پنجاب ریونیواتھارٹی کے ایڈیشنل کمشنر(انفورسمنٹ)شہزاد محمود گوندل نے کمشنر آفس میں منعقدہ اجلاس میں بتائی جس میں ڈی سی اوجھنگ،چنیوٹ راجہ عمرشہزاد،ڈاکٹرارشاد احمد،ایڈیشنل کمشنر ریونیو ملک صلاح الدین،اسسٹنٹ کمشنر(جنرل)مہر شفقت اللہ مشتاق کے علاوہ چاروں اضلاع کے ایڈیشنل ڈسٹرکٹ کلکٹرز اور اسسٹنٹ کمشنرز نے شرکت کی۔ایڈیشنل کمشنر انفورسمنٹ نے بتایا کہ اٹھارویں آئینی ترمیم کے بعد صوبوں کو مختلف ٹیکسزکے نفاذ کا حق ملا ہے جس کے تحت حکومت پنجاب نے جولائی 2012ء میں پنجاب ریونیواتھارٹی کے قیام کاقانون پاس کرکے بالواسطہ مختلف سروسز پر سیلز ٹیکس لگایا ہے اور اب تک مختلف سروسز کوسیلز ٹیکس کے زمرے میں لایا گیا ہے جن میں ہوٹلز،ریسٹورنٹ،کلبز،کیٹررز،میرج ہالز،کورئیر،کنسٹرکشن سروسز،بیوٹی پارلرز،پراپرٹی ڈیلرز،انشورنس،سٹاک بروکرز،الیکٹرانک میڈیا ایڈورٹائزمنٹ بشمول کیبل،کسٹم ایجنٹس،کلینکس،رینٹ اے کار،کارڈیلرز،سیکورٹی کمپنیز،ٹول مینوفیکچرنگ،فارن ایکسچینج،ٹورآپریٹرز،انٹرنیشنل ان کمنگ کالز،آرکیٹیکٹ ،فیشن ڈیزائنرز،بزنس سپورٹ سروسز،شےئرٹرانسفرایجنٹس،پورٹ سروسزودیگر سروسز شامل ہیں۔انہوں نے سیلزٹیکس کی وصولی کے لئے دائرہ اختیار،رجسٹریشن کے طریقہ کار،بقایا جات کی ریکوری اور دیگر متعلقہ امور سے آگاہ کیا۔انہوں نے بتایا کہ سیلز ٹیکس کے نفاذ کے دائرہ اختیار،وصولی کے طریقہ کار اوردیگرضروری امور کے بارے میں متعلقہ افسران کی ٹریننگ کا بھی بندوبست کیا جارہا ہے۔اجلاس کے دوران شرکاء میں پنجاب ریونیواتھارٹی کے ڈھانچے کی تفصیلات اورسیلز ٹیکس قوانین پر مشتمل بکس تقسیم کی گئیں۔

0 comments

Write Down Your Responses