صوبائی حکومت نے لیڈی ہیلتھ ورکرز کی تنخواہوں کی ادائیگی کے لئے 35 کروڑ روپے کے فنڈز جاری کر دئیے

لاہور(انویسٹی گیشن ٹیم) پنجاب حکومت کی جانب سے تنخواہوں کی ادائیگی سمیت دیگر مطالبات کی منظوری کے اعلانات کے باوجود لیڈی ہیلتھ ورکرز کا دھرنا دوسرے روز بھی جاری ہے۔
منگل کی صبح لیڈی ہلتھ ورکرز کے ایک گروپ نے دھرنا ختم کردیا تھا جبدکہ دوسرے گروپ کی جانب سے پجاب اسمبلی کے سامنے لیڈی ہیلتھ ورکرز کی جانب سے تنخواہوں کی ادائیگی اور دیگر مطالبات کے حق میں دیا جانے والا دھرنا بدستور جاری ہے۔ دھرنے میں شریک کئی خواتین نے بھوک ہڑتال بھی شروع کررکھی ہے جس کی وجہ سے بعض خواتین کو طبیعت خراب ہونے پرانہیں اسپتال منتقل کردیا گیا ۔
دوسری جانب محکمہ صحت پنجاب کی جانب سے جاری بیان میں کہا گیا ہے کہ صوبائی حکومت نے لیڈی ہیلتھ ورکرز کی تنخواہوں کی ادائیگی کے لئے 35 کروڑ روپے کے فنڈز جاری کر دئیے ہیں ، جس کے بعد لیڈی ہیلتھ ورکرز کو ایک ہفتے میں تنخواہوں کی ادائیگی کردی جائے گی۔ اس کے علاوہ ان کے دیگر مطالبات کو بھی جلد ہی پورا کردیا جائے گا، حکومتی اعلانات کے باجود لیڈی ہیلتھ ورکرز نے دھرنا ختم کرنے سے انکار کردیا ہے، ان کا کہنا ہے کہ سپریم کورٹ کے واضح کے احکامات کے باوجود نہ تو انہیں بروقت تنخواہیں ادا کی جارہی ہیں اور نہ ہی انہیں مستقل کیا جارہاہے لیکن اس بار عملی اقدامات تک وہ اپنا احتجاج ختم نہیں کریں گی

0 comments

Write Down Your Responses