ہائر ایجوکیشن کمیشن کے تعاون سے اسلامیہ یونیورسٹی بہاول پور کے شعبہ انگریزی کے زیر اہتمام تین روزہ بین الاقوامی کانفرنس برائے لسانیات کا آغاز

بہاول پور (اقبال انجم ڈپٹی انویسٹی گیشن انچارج ) ہائر ایجوکیشن کمیشن کے تعاون سے اسلامیہ یونیورسٹی بہاول پور کے شعبہ انگریزی کے زیر اہتمام تین روزہ بین الاقوامی کانفرنس برائے لسانیات کا آغاز ہو گیا۔ افتتاحی اجلاس کی صدارت پروفیسر ڈاکٹر محمد مختار وائس چانسلر اسلامیہ یونیورسٹی بہاولپور وگورنمنٹ صادق کالج ویمن یونیورسٹی نے کی جبکہ رکن قومی اسمبلی بیگم پروین مسعود بھٹی اوربریگیڈےئر ریاض الحسن کمانڈر ڈیزرٹ رینجرز بہاولپور اس موقع پر مہمان اعزاز تھے ۔ اس بین الاقوامی ایونٹ میں پاکستان ، ازبکستان، یمن، ترکی اور سعودی عرب سے 150مندوبین شریک ہیں۔ کانفرنس کا افتتاح کرتے ہوئے پروفیسر ڈاکٹر محمد مختار نے کہاکہ پاکستان مستقبل کی عظیم قوت ہے کیونکہ بہترین صلاحیتوں سے لیس کروڑوں نوجوان مادرِ وطن کے لیے تمام شعبہ ہائے زندگی میں خدمات سرانجام دینے کے لیے تیار ہیں۔آج اسلامیہ یونیورسٹی بہاولپور بھی انہی نوجوان طلبہ وطالبات اور اساتذہ کی بدولت جنوبی پنجاب میں رینکنگ کے اعتبار سے پہلی جامعہ قرار پائی ہے اور یہ اعزاز بھی پورے ملک میں جامعہ کے ہی حصے میں آیا ہے کہ شمسی توانائی کا پہلا پلانٹ اِسی یونیورسٹی میں قائم کیا جا رہا ہے اورہمیں یہ انفرادیت بھی حاصل ہے کہ جامعہ اسلامیہ کے وائس چانسلر ملک بھر میں اپنی تصانیف اور تحقیق کے لحاظ سے صفِ اول میں شمار ہوتے ہیں۔ شعبہ انگریزی جامعہ اسلامیہ کے لیے اعزاز ہے کہ لسانیات پر پہلی بین الاقوامی کانفرنس منعقد ہو رہی ہے ۔ جامعہ نے ابھی حال ہی میں اُردو زبان میں براڈ کاسٹنگ کے شعبے میں عظیم خدمات سرانجام دینے پر رضا علی عابدی کے لیے اعزازی پی ایچ ڈی کا اعلان کیا ہے۔ وائس چانسلرنے کانفرنس کے کامیاب آغاز پر شعبہ کی چےئر پرسن پروفیسر ڈاکٹر میمونہ غنی اور فیکلٹی ممبران کو مبارکباد پیش کی۔مہمان خصوصی رکن قومی اسمبلی بیگم پروین مسعود بھٹی نے جامعہ کی رینکنگ میں اضافے اور تواتر سے یونیورسٹی میں قومی اور بین الاقوامی تقریبات ، کانفرنسز اور سیمینارز کے انعقاد پر وائس چانسلر پروفیسر ڈاکٹر محمد مختار کی قائدانہ صلاحیتوں کو خراج تحسین پیش کیا اور شعبہ انگریزی کی خاتون سربراہ کو تین روزہ بین الاقوامی اجتماع کا اہتمام کرنے پر مبارکباد دی۔ کانفرنس کی چےئر پرسن اور فوکل پرسن پروفیسر ڈاکٹر میمونہ غنی نے کہا کہ شعبہ انگریزی پاکستان بھر میں اپنے اعلیٰ تعلیمی معیار کی بنا ء پر ممتاز مقام کا حامل ہے ۔ خصوصاً لسانیات کے شعبے میں خصوصی انفرادیت کی بناء پر ملکی اور بین الاقوامی سطح پر شاندار پذیرائی مل رہی ہے ۔شعبہ سے اب تک 9پی ایچ ڈی اور 100ایم فل سکالر ز فارغ التحصیل ہو چکے ہیں جبکہ انتہائی اعلیٰ تحقیقی معیار کے 600ریسرچ پیپرز لکھے جا چکے ہیں۔انگریزی نصاب اور تدریسی تربیت کے حوالے سے بھی ملکی اور بین الاقوامی اِدارے اور ہائر ایجوکیشن کمیشن شعبہ ہٰذا کو انتہائی اہمیت دیتے ہیں۔ اُنہوں نے کانفرنس کے انعقاد میں خصوصی تعاون پر ہائر ایجوکیشن کمیشن کا شکریہ ادا کیا۔ نیشنل یونیورسٹی آف ماڈرن لینگوئجسز اسلام آباد کی ڈین فیکلٹی آف آرٹس پروفیسر ڈاکٹر شذرہ منور نے کہا کہ بین الاقوامی کانفرنسیں سکالرز کو ایک جگہ اکٹھا ہونے کا موقع فراہم کرتی ہیں تاکہ وہ دانشورانہ معلومات کا تبادلہ کر سکیں۔ اس سلسلے میں ہائر ایجوکیشن کمیشن کا کردار قابلِ تحسین ہے۔جامعہ اسلامیہ کے دائریکٹر ریسرچ پروفیسر ڈاکٹر اصغر ہاشمی نے تدریس اور تحقیق کے فروغ کے اعلیٰ مقصد کے لیے تمام مندوبین کی جامعہ آمد پر شکریہ ادا کیا۔ اس موقع پر ڈین فیکلٹی آف آرٹس پروفیسر ڈاکٹر رضیہ مسرت ،اٹلی سے آئی ہوئی ماہر سماجیات مونیکا لونگا ، خواتین ارکان صوبائی اسمبلی فوزیہ ایوب قریشی اور حسینہ ناز،دانشور ملک حبیب اللہ بھٹہ، سابق پارلیمنٹیرین سید تابش الوری ، بہاول پور چیمبر آف کامرس کے نمائندوں ، معززین ، اساتذہ کرام اور طلبہ وطالبات نے کثیر تعداد میں شرکت کی۔پہلے روز دو سیشن منعقد ہوئے جن میں ماہرین نے لسانیات اور اُن کی مختلف جہتوں سے متعلق تحقیقی مقالہ جات پیش کیے

0 comments

Write Down Your Responses