فنکشنل لیگ اندرون سندھ کی دوسری بری سیاسی پارٹی بن کر ابھری

سانگھڑ( انویسٹی گیشن ٹیم) فنکشنل لیگ اندرون سندھ کی دوسری بری سیاسی پارٹی بن کر ابھری سانگھڑ جلع کی تین ایم این اے اور چھ ایم پی اے کی سیٹ ھاصل کرنے والی پارٹی جس کے ہمیشہ سے ضلع موجودہ ناظم و چیرمین منتخب ہوئے پی پی امیدوار الیکشن میں صرف کانہ پوری کے لئے الیکشن لڑتے تھے مگر زرداری حکومت میں فنکشنل کو پی پی نے حکومت میں ساتھ ملاکر پارٹی کو کمزور کردیا جس کا فائدہ جنرل الیکشن میں پارٹی کو ملا یہ ہی نہیں NA235.PS81سے پہلی بار پی پی کامیاب فنکشنل لیگ کے ایم پی اے مقامی قیادت سے ناراض تھے مگر اس کو منانے کی بجائے اس کو نظر انداز کیا جانے لگا جس کا نتیجہ رانا عبدالستار راجپوت کا فنکشنل کو چھوڑ کر پی پی میں شمولت کا سبب بن گیا رانا عبدالستار راجپوت کا خاندان ہمیشہ سے پیر صاحب پاگاڑہ کے قریب رہا پیر صاحب نے رانا عبدالستار کو سنجھورو کا تعلقہ ناظم اور پھر ایم پی اے سنجھورو بنایا پنجاب کے اسپکر رانا محمد اقبال کے قریبی رشتے دار رانا عبدالستار راجپوت نے سانگھڑ میں راجپوت برادری کو مضبوط کیا اور ان کے فلاحی کام کئے رانا عبدالستار راجپوت کا کہنا ہے کہ انھوں نے فنکشنل لیگ نہیں چھوڑی فنکشنل کی مقامی قیادت نے ان کو پارٹی سے نکالا ہے پیر صاحب کے خاندان کے ان پر بیشمار احسانات ہیں وہ پیر صاحب پاگاڑہ سے ہمیشہ محبت کریں گئے رانا عبدالستار راجپوت کا کہنا ہے کہ ان کے ساتھ کتنی عوام ہے اس کا اندازہ بہت جلد لگ جائے گا وہ چند روز کے بعد سانگھڑ آئیں گئے تو ان کے ہمدرد بھی پی پی میں شمولیت کریں گئے رانا عبدالستار راجپوت کا کہنا ہے کہ وہ ورکر ہیں پی پی میں اپنے کام سے جگہ بنائیں گئے سندھ حکومت ان کو مشیر بھی بنارہی ہے اور آنے والے الیکشن میں سنجھورو سے ایم پی اے کا ٹکٹ بھی دے رہی ہے انھوں نے الیکشن میں ریکارڈ ووٹ حاصل کئے تھے انھوں نے دس سال تک اپنے حلقے کی عوام کی خدمت کی ہے الیکشن میں ان کے ھلقے کی عوام ان کو مایوس نہیں کرے گئی ان کا کہنا تھا کہ ان کے پی پی میں شمولیت سے سانگھڑ کی قومی اسمبلی سنجھورو اور جام نواز کی سیٹ سے پی پی کی جیت یقینی ہوگئی ہے رانا عبدالستار راجپوت کے پی پی میں شامل ہونے پر فنکشنل لیگ کے مرکزی رہنما عبدالمالک سنجرانی نے سنجرانی ہاوس میں پریس کانفرنس کرتے ہوئے کہا ہے کہ رانا عبدالستار راجپوت کو مقامی قیادت کے رویے کی وجہ سے فنکشنل کو نہیں چھوڑنا چاہیے تھا رانا عبدالستار راجپوت کو تعلقہ ناظم شپ اور ایم پی اے شپ مقامی قیادت نے تو نہیں دی تھی یہ سب کچھ ان کو پیر صاحب پاگارہ نے نوازہ تھا آج رانا عبدالستار اس پوزیشن میں ہے تو یہ پیر صاحب پاگاڑہ کی بدولت ہے ورنہ رانا عبدالستار راجپوت جھول سے کونسلر بھی نہیں منتخب ہوسکتا تھا عبدالمالک سنجرانی نے فنکشنل لیگ کے سربراہ پیر صاحب پاگاڑہ سے اپیل کی کہ وہ سانگھڑ کے مایوس ورکروں کی حوصلہ افزائی کے لئے ڈسٹرکٹ لیول کے کنونشن کی صدارت کریں اور ورکروں کی شکایت سنیں کیوں کہ مقامی قیادت کے پاس ورکروں کے لئے تائم نہیں ہے سانگھڑ کی تباہ کاری اور لوٹ مار کی وجہ سے بلدیاتی الیکشن میں اگر ورکروں کو اہمیت نہ دی گئی اور مقامی وڈیروں کے ہاری اور بیٹوں کو ٹکٹ دے دیئے گئے تو بلدیاتی الیکشن کا رزلٹ بھی فنکشنل کے حق میں نہیں ہوگا جس کی وجہ ورکروں کی مقامی قیادت سے مایوسی ہوگئی

0 comments

Write Down Your Responses