کارکن گلی گلی پھیل کر جمعیۃ کا پیغام عام کریں

ڈیرہ اسماعیل خان(ایم وی این نیوز) جمعیۃ علماء اسلام کے مرکزی امیر مولانا فضل الرحمن نے کہا ہے کہ ایک مذہبی سیاسی جماعت ہونے کے ناتے جمعیۃ علماء اسلام یوم تاسیس سے لیکر اب تک ہر تین سال بعد رکن سازی کا سلسلہ برقرار رکھا ہوا ہے۔یہاں تک کہ مارشلاء کے ادوار میں بھی جمعیۃ علماء اسلام نے یہ سلسلہ ترک نہ کیا۔رکن سازی سے تنظیم سازی تک کے سفر میں داخل ہو چکے ہیں کارکن گلی گلی پھیل کر جمعیۃ کا پیغام عام کریں ہمیں رکن سازی کے دوران حقائق کو مدنظر رکھنا ہو گا،جماعت میں زیادہ سے زیادہ رکن سازی پر بحث کی جاتی ہے ہمیں حقیقت کی بنیاد پر رکن سازی کرنا ہو گی جماعت کے منشور سے اتفاق رکھنے والے اور جماعت کے نصب العین سے اتفاق کرنے والے جب جماعت کے رکن بن جاتے ہیں تو وہی جماعت کی اصل طاقت ہوتے ہیں ان خیالات کا اظہار انہوں نے لاہور سے ٹیلی فون پر جمعیۃ علماء اسلام تحصیل ڈیرہ کے ناظم انتخابات چوہدری محمد اشفاق ایڈوکیٹ سے گفتگو کے دوران کیا، مولانا فضل الرحمن نے کہا کہ جمعیۃ علماء اسلام نے کبھی بھی اپنی جماعت کی رکنیت سازی سے قبل ٹارگٹ مقرر نہیں کیا کیونکہ اگر ٹارگٹ مقرر کیا جائے تو جعل سازی سے کام لینا پڑتا ہے لہذا اس سے اجتناب برتنے کے لئے ہم نے کبھی بھی ٹارگٹ کی بات نہیں کی ان کا کہنا تھا کہ جمعیۃ علماء اسلام میں شمولیت کی دعوۃ لوگوں کو اچھائی کی طرف بلانا اور برائیوں سے روکنا ہے ۔ان کا کہنا تھا کہ جماعتی پروگرام کو منظم انداز میں آگے لے جانے کے لئے ضروری ہے کہ جماعت کی رکنیت سازی میں تمام صلاحیتیں بروئے کار لائی جائیں۔انشاء اللہ اس بار ہماری توقعات سے بڑھکر رکنیت سازی ہو گی ۔

0 comments

Write Down Your Responses