عام لوگوں کو مہنگائی سے نجات دلوانے کے لئے ضروری ہے کہ ماضی کی طرح شہروں میں ہر وارڈ اور دیہی علاقہ جات میں یونین کونسل کی سطح پر راشن کارڈ ڈپو قائم ہو

ہارون آباد(انویسٹی گیشن ٹیم) سستی روٹی اور محمدی دسترخوان کی سکیمیں اس لحاظ سے ناکام ہو چکی ہیں کہ ملک کی اکثریتی غریب آبادی اس سے استفادہ حاصل کرنے سے زیادہ تر محروم ہی رہتی ہے ۔اس طرح یو ٹیلٹی سٹوروں کے ملازمین بھی اپنے اختیارات اور من مانیوں کے ذریعہ اپنے خاص اور منظور نظر کو نواز کر خود بھی بہتی گنگا میں اپنے ہاتھ دھو لیتے ہیں ۔ان خیالات کا اظہار مختلف شعبہ ہائے زندگی سے تعلق رکھنے والے افراد رانا کاشف ،طارق اقبال ،فریاد علی ،ندیم عباسی ،شبیر شاہ ،محمد سرور و دیگر نے کیا ۔انہوں نے کہا کہ عام لوگوں کو مہنگائی سے کسی بھی حد تک نجات دلوانے کے لئے ضروری ہے کہ ماضی کی طرح شہروں میں ہر وارڈ اور دیہی علاقہ جات میں یونین کونسل کی سطح پر راشن کارڈ ڈپو قائم کر کے تمام شہریوں کو سرکاری طور پر ان کے افراد خانہ کی مناسبت سے راشن کارڈ جاری کئے جائیں ۔اس طرح سے حکومت کو یوٹیلٹی ملازمین کی نوج ظفر موج کی تنخواہوں کی ادائیگی کی صورت میں مالی بوجھ سے نجات بھی حاصل ہو گی اور حکومتی سبسڈی سے غریب کو مستفید ہونے کے بھی مساوی مواقع میسر ہو نگے ۔شہریوں نے مزید کہا کہ راشن ڈپو کے قیام اور راشن کارڈ کا اجراء محکمہ خوراک کا عملہ بخوبی کر سکتا ہے ماضی میں بھی یہ بہت ہی موثر طریقہ کار رہا اور راشن ڈپو 1980ء تک عوام کو سستے داموں آٹا اور چینی کی فراہمی اطمینان بخش انداز میں ہوتی ہے ۔عوام کی منتخب موجودہ حکومت کو بھی اس طریقہ کا ر کو اختیار کرتے ہوئے مہنگائی کے خاتمہ کے لئے موثر عملی کاروائی کرنا چاہیے ،

0 comments

Write Down Your Responses