بھٹہ مالکان کا مزدور خواتین پر وحشیانہ تشد، 2ماہ کی بچی بھٹہ مالکان کے ظلم و ستم کا شکار ہو کر دم توڑ گئی، لیبر قومی موومنٹ

فیصل آباد( )بھٹہ مالکان کا مزدور خواتین پر وحشیانہ تشدد مزدوروں پر اُجرت میں اضافہ کے احتجاج کرنے کی پاداش میں فائرنگ اور قاتلانہ حملوں کا سلسلہ بڑھ گیا ایس ایچ او سیٹلائٹ ٹاؤن جھنگ ملزمان سرور نول وغیرہ سے ساز باز ہو گیا پروین بی بی اور عشرت بی بی کو زبردستی اغواء کرنے کی کوشش کی گئی 2ماہ کی بچی بھٹہ مالکان کے ظلم و ستم کا شکار ہو کر دم توڑ گئی ان خیالات کا اظہار لیبر قومی موومنٹ پاکستان کے عہدیداران اسلم معراج انصاری، محمد شبیر،میڈم ثریا،بابا عبداللطیف، پروین لطیف، میڈیم ساجدہ، رمضان بی بی ، ایمانوائیل مسیح،سہیل عباس، بابا اسلم ، نذیراں بی بی نے فیصل آبادپریس کلب میں پر ہجوم پریس کانفرنس سے مشترکہ خطاب کرتے ہوئے کیا انہوں نے کہا کہ بھٹہ مالکان کے ظلم و جبر زیاتیوں پر خاموش نہیں رہیں گے۔ بھٹہ مالکان کے ظلم و ستم کے خلاف احتجاجی تحریک کا اعلان کرتے ہوئے ہم29نومبر کو ٹوبہ ٹیک سنگھ میں ریلی نکالتے ہوئے آغاز کر رہے ہیں۔ اس کے بعد آر پی او آفس کے باہر بھٹہ مزدوروں خواتین اور اسمبلی کے سامنے تادم مرگ دھرنا دیں گے پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ کمشنر اور آر پی او کے نوٹس لینے پر بھی ایس ایچ او سیف الرحمن بھٹی نے بااثر بھٹہ مالکان سے ساز باز کرتے ہوئے احکامات کو ہوا میں اڑا دیا اراکین قومی و صوبائی اسمبلی ضلع جھنگ بھی مالکان کے حامی اور مزدوروں کے دشمن بن گئے۔ اس موقع پر سہیل نامی بھٹہ مزدور نے اپنے اوپر ہونے والے ظلم و ستم کی روداد سناتے ہوئے کہا کہ ہم اپنا سامان بھٹہ سے اُٹھانے گئے تو بھٹہ مالکان اور ان کے مسلح غنڈوں نے ہم پر ظلم کے پہاڑ توڑ دئیے اور میری دوماہ کی بچی سردی لگ جانے سے فوت ہو گئی اس نے روتے ہوئے کہا کہ اگر مجھے اور دیگر بھٹہ مزدوروں کا انصاف نہ ملا تو اپنے خاندان کے ہمراہ خود سوزی کر لیں گے جس کی تمام تر ذمہ داری ڈویژنل انتظامیہ اور پولیس پر ہو گی۔ 

0 comments

Write Down Your Responses